حاسِد {حا + سِد} (عربی)

ح س د، حاسِد

اصلاً یہ عربی زبان کا لفظ اور ثلاثی مجرد کے باب سے ہے۔ عربی میں بطور اسم صفت مستعمل ہے اور اردو میں بطور صفت مستعمل ہے۔ 1665ء کو "علی نامہ" میں مستعمل ملتا ہے۔

صفت ذاتی (مذکر - واحد)

جنسِ مخالف: حاسِدَہ {حا + سِدَہ}

جمع استثنائی: حاسِدِین {حا + سِیدِین}

جمع ندائی: حاسِدو {حا + سِدو (و مجہول)}

جم ع غیر ندائی: حاسِدوں {حا + سِدوں (و مجہول)}

معانیترميم

1. حسد کرنے والا، کسی کی نعمت یا دولت وغیرہ سے جلنے والا، بدخواہ۔

"ان کے چند دشمن حاسد اور نکتہ چیں بھی پیدا ہو گئے۔"، [1]

انگریزی ترجمہترميم

envious

مترادفاتترميم

دُشْمَن، خَصَم، بَیری

حوالہ جاتترميم

  1. ( 1983ء، نایاب ہیں ہم، 43 )