صُورَت آشْنا {صُو + رَت + آش + نا}

عربی سے مشتق اسم صورت کے ساتھ فارسی سے اسم جامد آشنا ملنے سے مرکب بنا۔ اردو میں بطور صفت استعمال ہوتا ہے۔ اور سب سے پہلے 1780ء کو "کلیاتِ سودا" میں تحریراً مستعمل ملتا ہے۔

صفت ذاتی

معانیترميم

1. جس سے معمولی جان پہچان ہو، دور کی صاحب سلامت کا واقف کار، جانا پہچانا۔

"صورت آشنا ہونا ممکن نہیں تھا، شادی ہو جاتی تو ملاقات ہوتی۔"، [1]

مترادفاتترميم

رُوشَناس، واقِف، شَناسا، صُورَت شَناسا

حوالہ جاتترميم

  1. ( 1989ء، افکار، کراچی، اکتوبر، 17 )

رومنترميم

Surat aashna

تراجمترميم

انگریزی : One known by sight only