ظَفَر {ظَفَر} (عربی)

ظ ف ر، ظَفَر

عربی زبان میں ثلاثی مجرد کے باب سے مشتق اسم ہے۔ اردو میں بھی بطور اسم مستعل ہے۔ سب سے پہلے 1564ء کو "دیوان حسن شوقی" میں مستعمل ملتا ہے۔

اسم کیفیت (مؤنث - واحد)

معانیترميم

1. کامیابی، فتح، متحمندی، دشمنوں پر غلبہ۔

"اس کا مقصد صرف فوج کا لڑانا اور فتح و ظفر حاصل کرنا نہ تھا۔"، [1]

انگریزی ترجمہترميم

Victory, triumph; success; profit, gain

مترادفاتترميم

فَتْح، کامْرانی، جِیت، دِجے، کامْیابی،

مرکباتترميم

ظَفَر اَنْگیز، ظَفَر بَنْد، ظَفَر پَیکَر، ظَفَر پَیوَنْد، ظَفَر تَوام، ظَفَر جَنْگ، ظَفَر رِکاب، ظَفَر صُورَت، ظَفَر قَرِیں، ظَفَر گھات، ظَفَر مَنْد، ظَفَر مَوج، ظَفَر نامَہ، ظَفَرتَکْیَہ، ظَفَریاب، ظَفَر مَنْدی، ظَفَر یابی

حوالہ جاتترميم

  1. ( 1914ء، سیرۃ النبیۖ، 58:2 )

مزید دیکھیںترميم


آذربائیجانیترميم

اسمترميم

ظفر

  1. ظفر

اردوترميم

اشتقاقیاتترميم

عثمانی ترک زبان طیاره سے، جو خود عربی ط ي ر سے ماخوذ ہے

فارسیترميم

اسمترميم

ظفر

  1. ظفر