ٹِن {ٹِن} (انگریزی)

Tin، ٹِن

اصلاً انگریزی زبان کا لفظ ہے اردو میں انگریزی سے ماخوذ ہے اور اصلی معنی اور اصلی حالت میں ہی اردو رسم الخط میں مستعمل ملتا ہے۔ 1856ء میں "فوائد الصبیان" میں مستعمل ملتا ہے۔

متغیّرات


ٹِین {ٹِین}

اسم مادہ (مذکر - واحد)

معانیترميم

1. ایک ملائم لچکدار دھات کا نام۔

"مثبت اجساموں میں سونا .... ٹن جست وغیرہ ہیں۔" [1]

2. لوہے کی پتلی چادر جس پر قلعی ہوتی ہے اور اس کے ہلکے برتن بنتے ہیں۔ (جامع اللغات)

3. ڈبا جو گول چوکور یا مستطیل شکل کا ہوتا ہے، اور اس میں بسکٹ، سگریٹ جام جیلی وغیرہ پیک کیے جاتے ہیں۔

"وہ اندر کمرے میں آئی میز پر سے ٹن اٹھا لیا۔" [2]

ڈبا کھولنے کا ٹین کا نوک دار ٹکڑا۔

"دیکھا گیا تو تو بسکٹ کا ڈبہ کھولنے کا نوکدار ٹن اور چند ٹیڑھے سیدھے پتھر برآمد ہوئے۔" [3]

انگریزی ترجمہترميم

an imitative , or an inarticulate sound; the screech or cry of a parrot (or other bird); murmuring, muttering, babbling, prating

مترادفاتترميم

لوہا،

مرکباتترميم

ٹِن کَٹَر

حوالہ جاتترميم

  1. ( 1856ء، فوائد الصبیان، 134 )
  2. ( 1966ء، سویرا، 49:37 )
  3. ( 1956ء، شیخ نیازی، 37 )

مزید دیکھیںترميم