حِدَّت {حِد + دَت} (عربی)

ح د د، حِدَّت

عربی زبان میں ثلاثی مجرد کے باب سے مشتق اسم ہے۔ اردو میں عربی سے ماخوذ ہے اور بطور اسم مستعمل ہے۔ 1845ء میں "نغمۂ عندلیب" میں مستعمل ملتا ہے۔

اسم کیفیت (مؤنث - واحد)

جمع: حِدَّتیں {حِد + دَتیں (ی مجہول)}

جمع غیر ندائی: حِدَّتوں {حِد + دَتوں (و مجہول)}

معانیترميم

1. تیزی، شدت؛ گرمی کی شدت، گرمی، حرارت، تمازت؛ تپش، سوزش۔

؎ صبح کے قدموں کی آہٹ سے کچل جاتے ہیں

آبگینے ہیں کہ حدّت سے پگھل جاتے ہیں، [1]

2. زور، قوت، جوش، تیزی و تندی۔

"تخلیق کار جو افکار کی حدت اور جذبات کے کہرام کو محسوس تو کرتے ہیں مگر ان سے مغلوب نہیں ہوتے۔"، [2]

انگریزی ترجمہترميم

sharpness (of a sword); the edge (of a sword); sharpness, keenness, acuteness, acrimony, virulence

مترادفاتترميم

گَرْمی، اِحْراق، تَب، تَپ، اِحْتِراق، جَلَن، آنْچ، تَپِش، آگ، تاب و تَب، حَرارَت، شِدَّت،

مرکباتترميم

حِدَّتِ طَبْع، حِدَّتِ نَظَر، حِدَّتِ ذِہْن

حوالہ جاتترميم

  1. ( 1962ء، پتھر کی لکیر، 83 )
  2. ( 1982ء، دوسرا کنارہ، 7 )

مزید دیکھیںترميم