حَیثِیَّت {حَے + ثیْ + یَت} (عربی)

ح ی ث، حَیثِیَّت

عربی زبان میں ثلاثی مجرد کے باب سے مشتق اسم ہے اردو میں عربی سے ماخوذ ہے اور بطور اسم مستعمل ہے۔ 1880ء کو "فسانۂ آزاد" میں مستعمل ملتا ہے۔

اسم نکرہ (مؤنث - واحد)

جمع: حَیثِیَّتیں {حَے + ثیْ + یَتیں (ی مجہول)}

جمع غیر ندائی: حَیثِیَّتیوں {حَے + ثیْ + یَتوں (واؤ مجہول)}

معانیترميم

1. حالت، وضع، شکل، طرز۔

"میرا مقصد تھا کہ صرف دو خطوط کتابی حیثیت میں شایع کیے جائیں کہ جن میں کہ ادب کی رنگینی ہو۔"، [1]

2. صلاحیت، استعداد، لیاقت، خصوصیت۔

"سرسید کی ذات میں .... مختلف الجنس حیثتیں جمع تھیں۔"، [2]

3. مالی حالت، بساط، مقدرت، آمدنی۔

"طبیب کو لازم ہے کہ وہ نذرانہ، مریض کی حیثیت دیکھ کر قبول کرے، اپنی حیثیت دیکھ کر نہیں۔"، [3]

4. عزت، شان، مرتبہ، درجہ۔

"فراق کے کلام سے پتہ چلتا ہے کہ وہ حسرت کی عبوری حیثیت سے بہت آگے بڑھ گئے ہیں۔"، [4]

5. حوصلہ، ظرف۔ (نوراللغات)

6. مالیت، دولت، ملکیت، جائداد۔

(نوراللغات، جامع اللغات)

7. جگہ، خدمت، عہدہ۔

(اردو قانونی ڈکشنری)

انگریزی ترجمہترميم

ubiquity; universality; capacity, ability, capability, means, resources; merit; conditional proposition; condition (of life), status; outward form or appearance; nature, character

مترادفاتترميم

بِساط، قُدْرَت،

مرکباتترميم

حَیثِیَّتِ حِسّی، حَیثِیَّت سے، حَیثِیَّتِ عامِلانَہ، حَیثِیَّتِ عَرْفی، حَیثِیَّتِ قانُونی، حَیثِیَّتِ کَذائی، حَیثِیَّتِ مَشْہُورَہ، حَیثِیَّت یافْتَہ

حوالہ جاتترميم

  1. ( 1910ء، مکاتیب امیر مینائی، (دیباچہ)10 )
  2. ( 1901ء، حیات جاوید، 9 )
  3. ( 1979ء، کیسے کیسے لوگ، 67 )
  4. ( 1953ء، تحقیق و تنقید، 75 )

مزید دیکھیںترميم


فارسیترميم

اسمترميم

حیثیت

  1. حیثیت