حاضِر {حا + ضِر} (عربی)

ح ض ر، حاضِر

اصلاً یہ عربی زبان کا لفظ ہے اور ثلاثی مجرد کے باب سے ہے۔ عربی میں اسم فاعل کے طور پر مستعمل ہے اور اردو میں بھی بطور اسم صفت مستعمل ہے۔ 1503ء کو "نوسرہار، اردو ادب" میں مستعمل پایا گیا۔

صفت ذاتی (مذکر)

جمع: حاضِرِین {حا + ضِرِین}

معانیترميم

1. موجود، جو سامنے ہو (غائب کی ضد) آمادہ، تیار۔

؎ حاضر ہیں کلیسا میں کباب و مئے گل گوں

مسجد میں دھرا کیا ہے بجز موعظہ و پند، [1]

2. { قواعد }وہ ضمیر شخصی جو موجود کے لیے استعمال کی جائے، ضمیر غائب۔

"مضارع واحد غائب واحد حاضر، جیسے، آئے، جائے، کھائے، گائے وغیرہ۔"، [2]

انگریزی ترجمہترميم

present, ready, at hand, willing, content, the second person

مترادفاتترميم

مَوجُود، سامْنے، فَراہَم،

متضادات

غائِب،

مرکباتترميم

حاضِر اِمام، حاضِر ضامِن، حاضِروغائِب، حاضِر باش، حاضِر جَواب، حاضِر جَوابی، حاضِر دِماغ، حاضِر دَماغی، حاضِر طَبْع، حاضِر و غائِب، حاضِر و ناظِر، حاضِرُالْوَقْت، حاضِرِینِ جَلْسَہ

حوالہ جاتترميم

  1. ( 1935ء، بال جبریل، 33 )
  2. ( 1977ء، اردو املا اور رسم الخط، 37 )

مزید دیکھیںترميم