مزید دیکھیے: الف مفتوح، الف مکسور، اور الف مضموم

الف مقصورہ اردو، عربی، فارسی، پینجابی، سندھی، پشتو، اور بلوچی حروف تہجی کا پہلا حرف۔ ہندی میں بطور حرف علت استعمال ہوتا ہے۔
مصر کے ہیرو غلیفی خط میں "ا" بیل کے سر سے تعبیر کیا جاتا تھا۔ قدیم مصری زبان میں بیل کو آدا کہتے تھے۔اس لیے ہجائی رسم تحریر کے وقت فنیقی زبان میں اس کا نام الف ہوا۔
عربی میں الف کی دو قسمیں ہیں۔ یعنی الف ممدودہ آ اور الف مقصورہ ا ۔
الف ممدودہ کو کھینچ کر پڑھتے ہیں اور اس کے اوپر مد ہوتا ہے جیسے آپ، آگ، آمد۔ جبکہ الف مقصورہ کو الف ممدودہ کی مانند کھینچ کر نہیں پڑھتے جیسے اگر، اَٹل۔

عربی میں مقصورہ اس کو کہتے ہیں جس کے بعد ہمزہ نہ ہو۔ جیسے خطایا میں عربی میں ۔ ی کے اوپر نصف الف کی صورت میں لکھتے ہیں جیسے عیسٰی ۔ مصطفیٰ وغیرہ میں۔ گویا عربی میں مقصورہ الف ساکن کو کہتے ہیں جس کے بعد ہمزہ نہ ہو مگر کھینچ کر پڑھا جائے اور دو زبر کے برابر ہو اس کے برعکس اردو، کھوار اور فارسی میں الف مقصورہ متحرک بھی ہوتا ہے۔ مثلا اگر اِس ۔ اُن وغیرہ میں اور ساکن بھی ہوتا ہے، مثلا مال ، سال ، جالا وغیرہ میں مگر مد والے حرف کی طرح کھینچ کر نہیں پڑھا جاتا ۔ اگر الف متحرک ہو تو عربی میں اسے ہمزہ کہتے ہیں۔

علامتی معنیترميم

علامتی اعتبار سے الف کے معنی ہیں: خدائے واحد، صیقل کی لکیر، راستی، راست بازی، مفرد، اکیلا، ایک، مجرد، ننگا، دلیر، بہادر

عددترميم

حساب ابجد میں اس کا عدد ایک ہے۔

کلمہ کے وسط میں استعمالترميم

کلمہ کے وسط میں الف مندرجہ ذیل حالتوں میں ان علامات کے طور پر استعمال ہوتا ہے۔

حرفِ اتصالترميم

عطف کے لیے جیسے تگاپو (تگ اور پو)

حرفِ اضافتترميم

موسلادھار، موتیابند، سوتیاڈاہ، بھیڑیا چال

مابینِ متجانسینترميم

رنگارنگ، چھماچھم، گرماگرم، مارا مارا

انحصار و استیعابترميم

سراپا (سر سے پا تک) ، مونہا منہ

علامتِ فاعلترميم

قاتل، عالم

علامتِ جمعترميم

مساجد، مذاہب

کلمہ کے آخر میں استعمالترميم

کلمہ کے آخر میں الف مندرجہ ذیل حالتوں میں ان علامات کے طور پر استعمال ہوتا ہے۔

علامتِ تعدیہترميم

جلنا سے جلانا، چلنا سے چلانا، نکلنا سے نکالنا

علامتِ ماضی مطلقترميم

چلا، اُٹھا، سُنا

علامتِ حالئہ تمامترميم

کھلا ، کھلا ہوا

علامتِ تذکیرترميم

بھینسا، مرغا، بڑا

علامتِ تانیثترميم

مالا، بیوا، رادھا، صضریٰ، کبریٰ، علیا، سلمہا

علامتِ صفتترميم

اونچا، جھوٹا، نیچا

علامتِ تکبیرترميم

ٹوکرا، مٹکا

حرفِ الحاقترميم

ڈورا، بلما، جوڑا

حرفِ نداترميم

ناصحا، خدایا

حرفِ ندیہترميم

حسرتا، دردا

حرفِ فاعلیترميم

دانا، بینا، شنوا

حرفِ کثرتترميم

خوشا، بہت اچھا

اَ الف مفتوحترميم

حرفِ نفیترميم

اَٹل، اَچھوت، اَمِٹ، اَمَر

حرفِ نداترميم

اَجی، اَبے

سابقہ بمعنی کثرتترميم

اَچپل

حرفِ تفصیلترميم

اشرف، اکبر

اُ الف مضمومترميم

دور کا اشارہترميم

اُدھر، اُس

سابقہ بمعنی اوپرترميم

اُٹھنا، اُکھڑنا، اُگلنا

سابقہ بمعنی نیچےترميم

اُلٹ

اِ الف مکسورترميم

قریب کا اشارہترميم

اِدھر، اِتنا

بدلترميم

اِبن راصل میں "بنو" تھا

علامتِ مصدرترميم

اِنتضار (عربی) [1]

مزید دیکھیےترميم

  • اگلا حرف: ب

حوالےترميم